عمران خان کی رہائش گاہ سے مزید 5 کلاشنکوف اور گولیاں برآمد ہوئیں، ایس پی

پولیس عمران خان کی رہائشگاہ سےچلی گئی، زمان پارک سے پی ٹی آئی کے 40 کارکن گرفتار کیے گئے ہیں۔پولیس کے مطابق عمران خان کی رہائش گاہ سے مزید 5 کلاشنکوف اور گولیاں برآمد ہوئیں۔ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کے اسلام آباد روانہ ہونے کے کچھ دیر بعد لاہور میں پولیس نے زمان پارک میں آپریشن شروع کیا تھا۔پولیس گیٹ توڑ کر عمران خان کے گھر میں داخل ہو گئی، پولیس نے کرین کے ذریعے عمران خان کے گھر کا دروازہ توڑا۔پولیس نے عمران خان کی رہائشگاہ کے عقبی حصے کے ایک کمرے کی تلاشی بھی لی.پولیس اہلکار کا کہنا ہے کہ عمران خان کے گھر کےاندر سےفائرنگ ہوئی ہے۔زمان پارک میں آپریشن کے دوران 1 پولیس اہلکار زخمی ہوگیا جس کے بعد پولیس کی مزید نفری بھی پہنچ گئی ہے۔پولیس نے زمان پارک کے باہر لگے کیمپوں کو ہٹانا شروع کردیا ہے۔ذرائع کے مطابق پولیس کی بھاری نفری زمان پاک پہنچ گئی جبکہ قیدیوں کو لے جانے والی وین اور واٹر کینن کو کینال روڈ پر پہنچا دیا گیا ہے۔رپورٹس کے مطابق زمان پارک میں کرینیں بھی پہنچا دی گئی ہیں۔پولیس کے مطابق زمان پارک میں عمران خان کی رہائش گاہ کے ارد گرد ڈنڈا بردار کارکنان موجود ہیں۔پولیس کا کہنا ہے کہ کارکنان زمان پارک میں واقع گراؤنڈ اور عمران خان کی رہائش گاہ کے قریب کیمپوں میں موجود ہیں.پولیس نے زمان پارک میں موجود کارکنوں پر لاٹھی چارج کیا، پولیس نے عمران خان کی رہائشگاہ سے پٹرول بم بنانے والی بوتلیں بھی برآمد کی ہیں، پولیس کو زمان پارک سے غلیلیں اورکنچے بھی ملے.زمان پارک میں پولیس آپریشن کے دوران پی ٹی آئی کارکنوں نے پتھراؤ کیا جس سے 3 پولیس اہل کارزخمی ہوگئے جنہیں سروسز اسپتال منتقل کردیا گیا.عمران خان کی ہمشیرہ ڈاکٹرعظمی زمان پارک پہنچ گئیں۔ ان کا کہنا ہے کہ گھر میں عورتوں اور بچوں کے سوا کوئی نہیں ہے، اب دیکھتے ہیں قانون کیا کرتا ہے۔پی ٹی آئی کی چند خواتین کارکن بھی عمران خان کی رہائش گاہ پہنچ گئیں۔ان کا کہنا ہے کہ بشری بی بی گھر میں موجود ہیں کسی کو اندرجانے نہیں دیں گے، بشری بی بی باپردہ خاتون ہیں ان کا سیاست سے کوئی تعلق نہیں.پنجاب پولیس کی جانب سے اسپیکر کے ذریعے دفعہ 144 کا اعلان کردیا گیا۔پولیس نے اعلان کیا کہ دفعہ 144 نافذ ہے، آپ سے گزارش ہے منتشر ہو جائیں۔دوسری جانب پی ٹی آئی ورکرز کی جانب سے پولیس کے خلاف نعرے بازی کی جا رہی ہے۔.واضح رہے کہ گزشتہ روز زمان پارک میں پولیس کی کارروائی سے متعلق پنجاب کی نگراں حکومت اور تحریک انصاف کے درمیان معاہدہ طے ہوا تھا ،فریقین کے درمیان ریلیوں،سیکیورٹی اور قانونی معاملات کے ٹی او آرز طے پائے۔معاہدے کے مطابق تحریک انصاف وارنٹس کی تکمیل، سرچ وارنٹس کے لیے پولیس کے ساتھ تعاون کرے گی اور اس کے علاوہ جماعت کی جانب سے زمان پارک کے اردگرد ہنگامہ آرائی کے سلسلے میں 14 اور 15مارچ کو درج ہونے والے مقدمات کی تفتیش میں بھی تعاون کیا جائے گا.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *